پھول اور خوشبو

Education posted on 1/5/2021 4:23:20 PM by Abrahim , Likes: , Comments: 0, Views: 684

پھول اور خوشبو
میں اس وقت ہسپتال کے بالکل سامنے بیٹھی ہوں ، یہاں بہت سے پودے ہیں ، بہت سے پھول .. پھول تو میرے گھر میں بھی ہیں ، گھر کے باہر .. اچھے ، خوبصورت پھول ، دن اور رات کو معطر کرتے ہوئے ، انگوروں کی ایک بیل بھی ہے ، جس کے ہر پتے کو میں نے "محبت" سے منسوب کر رکھا ہے!

"پھول اور خوشبو"

از قلم✍ کومل سلطان خان

کیوں نا کسی خیال کی خوشبو میں ڈھل جاؤں 

کہ بکھر کر بھی جو مہکتی رہے

 

میں اس وقت ہسپتال کے بالکل سامنے بیٹھی ہوں ، یہاں بہت سے پودے ہیں ، بہت سے پھول .. پھول تو میرے گھر میں بھی ہیں ، گھر کے باہر .. اچھے ، خوبصورت پھول ، دن اور رات کو معطر کرتے ہوئے ، انگوروں کی ایک بیل بھی ہے ، جس کے ہر پتے کو میں نے "محبت" سے منسوب کر رکھا ہے!

میری پہلی خفگی جو آپ پہ آشکار ہوئی تھی ، ان پیڑ پودوں سے ہی تعلق رکھتی تھی نا ۔

"پرانے لوگ کہتے ہیں کہ پودے انسانوں کے دوست ہوتے ہیں!" میں نے لکھ بھیجا تھا ۔ رو رہی تھی ۔

"ایسا ہی ہے!" جواب ملا ، اور مجھے اور شدت سے رونا آیا ۔

"جھوٹ ۔ جھوٹ ہے یہ بالکل!"

"جھوٹ؟ کیسے؟"

"اگر یہ پودے میرے دوست ہوتے تو یوں سرسبز ہوتے بھلا؟ میں اداس ہوں تو انہیں بھی جل جانا چاہیے۔"

جواب میں آپ ہنسے تھے ، آپ ہنسے تھے ، مجھے بس یہ یاد ہے ، اور نہیں ، کچھ نہیں!

 اور .. میرے گھر میں لگے ہوئے پودے جل رہے ہیں ، میں نے دیکھا ہے ، ان کے کتنے ہی پتے خفا ہوگئے ہیں ، مرجھا گئے ہیں ، اور میں ایسا نہیں چاہتی ، میں چاہتی ہوں وہ ہرے بھرے رہیں ، زندگی سے بھرپور! میرے لیے امید بنیں ، میں نہیں چاہتی کہ وہ جل جائیں ..

(یہ بھی سوچ رہی ہوں کہ میری مرضی سے سب ہوتا ہی کب ہے)کاش کہ وقت کو پنکھ لگ جائیں۔۔۔ اور یہ میرے لیے زوال کا عروج رکھتے ہوئے۔۔۔ اپنے گرد آلود پروں کو جھاڑتا ہوا۔۔۔ ان گنت خوشنما رنگوں کو۔۔۔ میری ذات کے بے رنگ کینوس پر بکھیرتا چلا جائے۔۔۔ تاکہ میرا ریزہ ریزہ ہوتا ہوا وجود۔۔۔ قوس قزح کی طرح ساتوں رنگوں سے جڑ جاۓ۔۔۔ اور پھر قسمت اپنی نگاہ خاص کے اثر سے۔۔۔ زندگی کے اس آٹھویں روشن رنگ سے۔۔۔ میری تڑپتی ہوئی دعاؤں پر اپنے "کن فیکون" کی مہر ثبت کردے۔۔۔ جن کے معجزہ کشا ہونے پر۔۔۔ میں بھی کھلکھلا کر اڑتی رنگ برنگی تتلی کے جیسے۔۔۔ اپنے خیالوں کی دنیا کے مہکتے پھول پر جا بیٹھوں۔۔۔ اور ان خوش رنگ اور خوشبودار پھلوں کو اپنی آنکھوں کے دریچے میں قید کر لوں۔۔۔ جن کے بار بار تصورات میں آنے سے میری مسکراہٹ اچھے وقت کے۔۔۔ انتظار کا سوچ کر۔۔۔ مزید تیز ہو جایا کرتی ہے۔۔۔

 

مزید  پڑھیے:صبر

 

تعارف :  کومل سلطان خان

میرا نام کومل سلطان خان ہے۔ میرا تعلق منڈی بہاؤالدین سے ہے۔

23دسمبر کی ٹھٹھرتی اور منجمند کر دینے والی رات کو ہمیں دنیا میں آنے کا شرف حاصل ہوا۔ قدر مطلق کا احسان کے اسلامی گھر آنے میں اس روح ازل کو بھیجا۔

اسی حساب سے ہمارا اسٹار جدی ہے یعنی جدی پشتی ہے۔اسٹار پر یقین تو نہیں ہے لیکن ایسے پڑھنا کافی لطف دے جاتا ہے۔

اور جہاں تک بات ہے لکھنے کی

 تو لکھنے کا شوق تو شروع سے ہی تھا کچھ کرم اپنوں نے کیا کچھ اور لوگوں نے کیا کہ اس نے باقاعدگی سے ایک صورت اختیار کرلی 2017 سے لکھنے کا آغاز کیا بس صحیح انسان کی تلاش تھی جو میرے ہنر کو پہچان کر اس چیز کو عملی جامہ پہنائے.

عمومی تحریریں پہلے بھی لکھی تھیں مگر کہانی کی شکل میں پہلی بار لکھنے کی کوشش کی تھی اور وہ بھی کچھ خاص لوگوں کے اصرار پر جن کی میں تہہ دل سے مشکور و ممنوں ہوں اور اپنی اس جیت کو انھیں کی نام معنون کرتی ہوں ⁦کہ وہی اس کے اصلی حق دار ہیں.


اپنے آرٹیکل ہمیں نیچے دیے ہویے ای میل پر پوسٹ کریں ہم آپکی کاوش کو پبلش کریں گے

Send us your Stories, Novels, Writings at below E-mail Address, We will publish.

[email protected] | [email protected]


Like: