Entertainment : نغمہء روح

تاریخ شائع 14-10-2021, تصنیف کردہ : فارعہ اکرم (Akram195)
درجہ بندی:

نغمہء روح

اذقلم فارعہ اکرم

تڑپتا رہا دل میرا'یہ سوچ کر...،

کہ مارا اپنوں نےتو روئے غیر مجھ پر،

چھوٹا نہ ٹوٹا!وہ دامن، بنایا تھا جو دل نے،

لیکن! فنا کر دیا'خون کے قربتوں نے...،

ندامت تو تھی ہی،مربھی چکے تھے!،

پھر بھی زمانے نے رسوا کر کے چھوڑا،

سوچا نہ سمجھا!کہ گذری کیا مقتولہ پر،

چلائے تیر اسنے' اس بے رخی سے...،

کہ!منتظر ہی رہا'یہ دل میرا...،

کانپے گی کھبی تو روح اس کی مگر!،

وہ تیر آزماتا رہا!،میں دل سے ہارتی رہی!

۔۔۔۔۔۔۔۔

متعلقہ اشاعت


Entertainment

اس تحریر کے بارے میں اپنی رائے نیچے کمنٹ باکس میں لکھیں