غزل : تمہارے انتظار میں گزرتی ہیں گھڑیاں سب ہی

تاریخ شائع 04-06-2021, تصنیف کردہ : فاریہ علی (Fariya)
درجہ بندی:

غزل

💔

تمہارے انتظار میں گزرتی ہیں گھڑیاں سب ہی 

کیا فرق پڑتا ہے وقت کیا ہے 

الفت نزاکت رفاقت چھنتے کے جا رہے ہیں معصومیت میری 

کیا فرق پڑتا ہے عمر کیا ہے 

یہ بارش کی بوندیں اداس کرتی ہیں مجھے آج بھی 

کیا فرق پڑتا ہے سبب کیا ہے  

تمہارے وجود سے وابستہ ہیں خوشیاں میری 

کیا تجھے نہیں پتہ میرا مسئلہ کیا ہے

متعلقہ اشاعت


غزل

غزل

غزل

اس تحریر کے بارے میں اپنی رائے نیچے کمنٹ باکس میں لکھیں