غزل : تمہیں تو اپنا مانا تھا

تاریخ شائع 04-06-2021, تصنیف کردہ : فاریہ علی (Fariya)
درجہ بندی:

غزل
🥰
تمہیں تو اپنا مانا تھا
اور تم نے ہی بغاوت کی ہے
میری نظروں نے آج مجھ سے ہی شکایت کی ہے
تم کو معاف ہے ہر جرم
اور تم نے ہی عنایتیں کی ہیں
تم کو اجازت ہے جاؤ جاؤ چلے جاؤ
میرے دل نے اس بار میری ہی مخالفت کی ہے
ہر بار محبت کی مار مارنا
فاریہ تم نے کیوں ہر بار یہ راہ اختیار کی ہے

متعلقہ اشاعت


غزل

غزل

اس تحریر کے بارے میں اپنی رائے نیچے کمنٹ باکس میں لکھیں